کاتھولک بائبل کمیشن پاکستان اورسینٹ پیٹرکس کیتھڈرل کے زیرِ اہتمام دسویں بائبل اسٹڈی کی کلاس

0
67

کاتھولک بائبل کمیشن پاکستان اورسینٹ پیٹرکس کیتھڈرل کے زیرِ اہتمام دسویں بائبل اسٹڈی کی کلاس

کراچی (ساگر نذر بھٹی) سینٹ پیٹرک پیرش میں کاتھولک بائبل کمیشن پاکستان کی جانب سے ایک سالہ بائبل اسٹڈی کورس کی دسویں کلاس مورخہ ۱۴ نومبر ۲۰۲۰؁ء کو ہوئی۔ اِس کلاس کے آغاز میں میں ابتدائی دُعا میں رہنمائی کرتے ہوئے ماسٹر جان اقبال نے پروگرام کے معلم اور شرکاء کو کلام مقدس کو سمجھنے اور اُس پر عمل پیرا ہونے کی خُدا سے التجا کی۔ اِس سیمینار میں نظامت کے فرائض سینٹ پیٹرک پیرش کے ماسٹر پرویز اقبال نے سر انجام دیئے۔ اِس کلاس کا مقصد نوجوان کے ایمان کو بڑھانا ہے تا کہ وہ ایمان میں مضبوط ہو کر کلام مقدس کی روشنی میں اپنی بلاہٹ کو جانیں اور درست راہ کا چنائو کر سکیں۔ اِس کلاس کی معلم مِس شازیہ ٹیلس تھیں جو کہ کاتھولک بائبل کمیشن کراچی کی جنرل سیکٹری کی خدمات سر انجام دے رہی ہیں۔ معلم نے ” اِرمیا نبی کی بلاہٹ ” پر لب کوشائی کی اور اُن کی مرکزی آیات ” پیشتر اِس سے کہ میں نے تجھے بطن ِ مادر میں بنایا، میں تجھے جانتا تھا اور پیشتر اِس سے کہ تو رحم سے نکلا میں نے تجھے مخصوص کیا، اور تُجھے قوموں کا بنی ٹھہرایا ” (اِرمیاہ 5:1 ) اور مقررہ نے اپنے پیغام میں بلاہٹ کے بارے میں بہت ہی خوبصورت انداز میں بیان کرتے ہوئے بتایا کہ خُدا جِسے بلاتا ہے اُسے ماں کے رحم ہی سے چُن لیتا ہے اور مخصوص کرتا ہے۔ اگر انسان خُدا سے دور ہو جائے تو پھر بھی خُدا اُس سے اپنا کام لے کر ہی رہتا ہے۔ مزید انہوں نے بتایا کہ جو بُلایا جاتا ہے وہ ہی نبی کہلاتا ہے، کیونکہ نبی کا مطلب نبوت کرنے والا اور نبوت وہ ہی کرتا ہے جِسے خُدا بلاتا ہے۔ مقررہ کے پیغام کو مومنین نے بڑی دلچسپی سے سُنا اور بعد ازاں مومنین نے معلم مس شازیہ ٹیلس سے بلاہٹ کے متعلق چند سوالات بھی پوچھے گئے۔ اختتامی دُعا میں ماسٹر پرویز اقبال نے رہنمائی کی اور ریفریشمنٹ کے ساتھ کلاس اختتام پذیر ہوئی۔

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں