تلاوت کے اصول: قاریوں کی تربیت کے لیے پروگرام کا انعقاد

0
55

تلاوت کے اصول: قاریوں کی تربیت کے لیے پروگرام کا انعقاد

حیدرآباد(میشائیل نقّاش یونس)مورخہ 15 نومبر 2020 بروز اتوار سینٹ فرانسس سلوانس چرچ نواب شاہ میں پیرش پریسٹ فادر صابر صادق اورپاسٹرل ٹیم نے کاتھولک بائبل کمیشن حیدر آبادڈایوسیس کی رہنمائی میں ’’تلاوت کے اصول‘‘ کے موضوع پر قاریوں کی تربیت کے لیے ایک پروگرام کا انعقاد کیا گیا ۔پروگرام کا آغاز اتوار کی پاک ماس کے بعد صبح 11:00 بجے ہوا۔ مبشرِ انجیل ماسٹر زاہد نے ایم- سی کے فرائض اداکیے۔ پروگرام دو حصوں پر مشتمل تھا ۔پہلے حصے میں ماسٹرعمران نے ابتدائی دُعا میں رہنمائی کی۔ انجیل بمطابق مُقدّس یوحنا 16-14:15 کی تلاوت کی سعادت شگفتہ اشرف نے حاصل کی ۔ماسٹر یونس نقاش نے پاک کلام کی روشنی میں ’’ تلاوت کے اصول ‘‘کے موضوع پر اپنے خیالات کا اِظہار کیا ۔عہدِ عتیق اور عہدِ جدید میں سے مختلف واقعات اور آیات کی روشنی میں پاک کلام پڑھنے اور سُنانے کی اہمیت اورفضائل و برکات کا تذکرہ کیا گیا ۔ اور بیان کیا گیاکہ ایک قاری پاک کلام کی تلاوت کے ذریعے اپنا نبوی ،رسالتی اور مسیح خُداوند کے قائم مقام ہونے کا کردار ادا کرتا ہے۔ تلاوت پڑھنے کے بدنی آداب میں شرکاء کی رہنمائی کی گئی ۔ پورے سیشن کے دوران سوالات وجوابات کی صورت میں قاری شرکاء نے اپنی بھر پور دلچسپی اور موجودگی کا احساس دلایا۔تکوین 12-3:4 کی تلاوت کے ذریعے ایک سرگرمی کروائی گئی ۔یہ تلاوت پہلی بار ثمینہ جارج نے اور دُوسری بار راج پرنس نے کی۔ فادر صابر صادق اور ماسڑ زاہد نے جج کے فرائض ادا کیے ۔اِس سرگرمی کے ذریعے تلاوت کرنے کے آداب ،آواز ، ادائیگی، تلفظ اور اعراب کے بارے میں رہنمائی کی گئی ۔اور مشورہ دیا گیا کہ تلاوت سے پہلے کسی سینئر قاری یا مبشرِ انجیل کو سُنائیں تاکہ الفاظ کی درستگی ہو سکے۔وقفہ سوالات میں شرکاء نے مختلف سوالات کیے۔ فادر صابر صادق اور جناب اکبر رافائیل نے سوالات کے تسلی بخش جوابات دیئے ۔ چائے کے وقفے کے بعد پروگرام کے دوسرے حصے میں جناب اکبر رافائیل نے کاتھولک بائبل کمیشن پاکستان کے پروگرام ،خدمات، اغراض و مقاصد اور جاری منصوبہ جات کے متعلق تفصیل سے بیان کیا۔ آپ نے اپنی گفتگو میں زور دیا کہ شرکاء کلام مُقدّس کے فروغ میں اپنا بھر پور اور موثر کردار ادا کریں۔جناب اکبر رافائیل نے نوجوانوں کی بائبل، بائبل کا سفر اور بڑے حروف والی نئی بائبل مُقدس کی رُونمائی کی اور علیحدہ علیحدہ ہر بائبل مُقدّس کی انفرادیت اور اہمیت بیان کی۔ شرکاء نے پسنددیدگی اور خریدنے کا اِظہار کیا۔ پروگرام کے آخر میں ماسٹر زاہد نے اِظہارِ تشکر میں اپنے خیالات کا اِظہار کرتے اور پروگرام کو سراہتے ہوئے کہا کہ اِس طرح کے پروگرام جاری رہنے چاہیئں تاکہ مومنین خُدا کے کلام میں بڑھتے اور ترقی کرتے رہیں۔فادر صابر صادق نے اپنے خیالات کا اِظہار کرتے ہوئے پاک کلام کے فروغ کی اہمیت پر مزید زور دیا اور کہا کہ خاندان کے ہر فرد کے پاس اپنی اپنی بائبل مُقدّس ہونی چاہیے اور والدین کو اپنی بیٹیوں کی شادیوں میں اوربچوں کی سالگرہ کے موقع پر بائبل مُقدّس بطور تحفہ دینی چاہییے۔ فادر جی کی آخری برکت کے ساتھ یہ خوبصورت تربیتی پروگرام اختتام کو پہنچا۔

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں