سینٹ فرانسس زیوئیر کیتھڈرل کے کمیونٹی ہال میں 30اکتوبر کوایک سیمینار کا انعقاد کیا گیا

0
57

نوجوان ہمارا مستقبل ہیں،بشپ سیمسن شکردین

مِس نسیم نے مختلف ویڈیوز، گانوں اور تصویروں کے ذریعہ بھی مثبت اورمستقبل کا پیغام دیا
نوجوانوں کو اپنی نئی دنیا اپنے انداز میں بنانے اور آگے بڑھنے کی ضرروت ہے ،مِس نسیم

حیددآباد (میرب بشیر) سینٹ فرانسس زیوئیر کیتھڈرل کے کمیونٹی ہال میں 30اکتوبر 2020 کو یوتھ کمیشن حیدرآباد نے ایک سیمینار کیا جسکا موضوع عدِم تشدد کمیونی کیشن تھا جسکی مقررہ مِس نسیم صادق نے (از لاہور سے تھیں) ایم ـ سی کے فرائض مِس شمائلہ یونس اور شہریار طارق نے ادا کیا مِس نسیم صادق نے اپنا موضوع کو بیان کرتے ہوئے بتایا کہ تشدد کا مطلب ،ظلم کرنا ،بر اسلوک کرنا ،دباؤ ڈالنا ،دھمکانا ،تکلیف دیناہے ۔ہم غصہ میں بھڑیئے کی طرح ہوجاتے ہے جبکہ ہمیں زبیرا کی طرح وسیع النظرہونا چاہیے ہمارے معاشرے میں ایسے لفظ،روئیے ہوتے ہیں جو زندگی کو برباد کر دیتے ہیں اور ایسے لفظ بھی ہوتے ہیں جو زندگی کو خوشگوار اور کامیاب بنا دیتے ہیں ۔ ہماری زندگی میں بہت قسم کے احساسات ہوتے ہیں ،خوشی ، غم ،پیار ،نفرت ،غصہ ،ان سب کا تعلق ہمارے دماغ سے ہوتاہے ،جب ہم کسی کو اپنا مسئلہ یا ضرورت بناتے ہیں وہ قبول نہیں ہوتی جب ہم کسی کو درخواست کرتے ہیں تووہ قبول ہوتی ہیں مارشل اوزن برگ کہتے ہیں یوتھ ہمارے معاشرے میں ریڑ کی ہڈی ہے عدِم تشدد مواصلات زندگی کی زبان ہے مِس نسیم نے کہا آج کا نوجوانوں کے لیے اچھی مشال ہے باہمی اعتماد واخترام کا ماحو ل پیداکریں نوجوانوں کو اپنی نئی دنیا اپنے انداز میں جنم دینے اور آگے بڑھنے کی ضرروت ہے مِس نسیم نے مختلف ویڈیوز،گانے، تصویروں کے ذریعہ بھی مثبت اورمستقبل کا پیغام دیا۔ان کے بعد عزت مآب بشپ سیمسن شکردین نے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا نوجوان ہمارا مستقبل ہیں میں محسوس کرتا ہوں کہ آج کا نوجوان بہت سے چیلجز کا سامنا کر رہا ہے مجھے خوشی ہوتی ہے جب نوجوان چیلج قبول کرتے نوجوان دل کی کھڑکی کھولیں تازہ ہوا لیں نوجوان خود اعتماد ہوں اپنی صلاحیتوں کو مضبوط کریں اور منفی باتوں کو ختم کر سکیں نوجوان لڑکے ،لڑکیوں کو اچھی راہوں کا چناؤ کرنا ہے تاکہ خاندان ،کلیسیا ،معاشرے میں ترقی کر سکیں اور ایک منفرد مقام پاسکیں ان کے بعد یوتھ ڈائریکٹر ماسڑ شوکت شہزاد نے بشپ صاحب کا شکریہ ادا کیا اور مِس نسیم کا جہنو ں نے اپنے موضوع کو بہت خو بصوت انداز میں پیش کرتے ہوئے نوجوانوں لی تربیت کی اور یو تھ کا شکریہ ادا کیا گیا اور تمام مہمانوں کو ہار پہنائے گئے.

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں