1. Home
  2. غزل

Tag: غزل

    گیت

    بٹھادیا گیا ہوجس کے سریہ پہرا کیا کرے گا جی کے وہ مفلس بیچاراآغاز وفا کیا تھا پہنچیں گے انجام تکناملی منزل ناوہ کیا قصور تھا ہمارادل کے آباد ہونے کی توقع نہیں ہے باقیتعاقب…

    (غزل)

    اُڑتے لمحے زندگی کے طویل کرلیں گےسولی پر نجات ہے جب دلیل کرلیں گےپانیوں پہ پھیلے جو بدحواس چہرے ہیںفضل گل کے سائبان میں جمیل کر لیں گےجوبھی مچھلی تڑپی ہے آب گاہ کے لئےاس…

    غزل

    (غزل )جس نے سولی کو تراشا ہوگاپھر کئی بار وہ رویا ہوگاکیل مصلوب کو ٹھونکے جس نےہاتھ وہ خوف سے کانپا ہوگانیزہ اک بار لگانے والے دل مسلسل تیرا دکھتا ہوگاجس نے یسوع کو پلایا سرکہپانی…

    غزل

    (غزل )خون مسیحا سے شفا ملتی ہےمردوں دِلوں کو بقاء ملتی ہےفرصت کے پل بندگی میں گزارودیکھنا تمہیں کتنی ذکا ملتی ہےتعریف اس کی جس نے کیبڑی عزت اسے جابجا ملتی ہےسرکشو یہ اچھی طرح…

    غزل

    ٭٭آواز دے ہمیں ٭٭ہم روحِ کائنات ہیں آواز دے ہمیںیزداں کا التفات ہیں آواز دے ہمیںاس شہر بدنصیب کی بے کیف بزم میںرنگینی حیات ہیں آوازدے ہمیںصحرائے زندگانی کی تشنہ فضاؤں میںاِک جامِ حادثات ہیں…

    غزل

    ٭٭روزوں کا پہلا اتوار٭٭روزوں کا ہے پہلا یہ اتوارآزمائش میں بھی ثابت قدمی کا ہے یہ پیغامروح القدس سے معمور یسوع ہے بیابان میںشیطان آزما رہا ہے یسوع کو اس امتحان میںچالیس دن تک شیطان…

    غزل

    {غزل}افسردہ مجھے وہ دیکھنا چاہتا نہیں ہےپسند اسے اور کوئی آتا نہیں ہےاسے کہا ہے لوگوں سے ملا کرونگاہیں مجھ سے وہ ہٹاتا نہیں ہےزندہ دلی اسے ملی ہے وراثت میںماتھے پہ بل وہ لاتا…

    غزل

    {روزوں کا آغاز}راکھ لگا کر ماتھوں پر کرتے ہیں ہم یہ اقرارروزوں کا اب کرتے ہیں ہم آغازچالیس دن کے سفر کی ہے یہ باتدکھوں کے اس سفر میں ہم بھی ہیں یسوع کے ساتھروزہ…

    غزل

    {غزل }میرے دل کے درپن میں مورت تمہاریکسی سے نہیں ملتی صورت تمہاریکروں تو کروں تم سے شکواہ میں کیسےمجھے تو ستاتی ہے عادت تمہاریبہت ہوگئی ہے سنو جانِ جاناںدل مضطرب کو ضرورت تمہاریسنا ہے…

    غزل

    غزلاس کے گھر سے میرے گھر تک فاصلہ ہے چند قدموں کا پھر بھی لگتا ہے کہ یارو یہ ہے کوسوں میلوں کالالچ دھمکی دے کر یا پھر اپنی خوش کن باتوں سےسودا کرنے حاکم…